Tag Archives: PTV

سادگی کا خوشیوں سے تعلق

ناصر بیٹے کوئی لفظ اچھا یا برا نہیں ہوتا۔ کسی چیز کا اچھا یا برا ہونا ایک ریلیٹو چیز ہے۔اب دیکھو نا ہمارے ملک میں دو طبقے آباد ہیں، ایک طبقہ اس ملک کی آبادی کا پچانوے فیصد ہے جس میں راجا زیرک خان، بودی پہلوان، ماسی برکتے، اور چاچاخدا بخش جیسے سادہ لوگوں کے علاوہ وہ تمام مڈل کلاس شامل ہے جن کے رویئوں، سوچوں اور عقیدوں کا تعلق اس ملک کے بنیادی نظریئے سے ہے۔

اس ملک میں ایک چھوٹا سا ملک اور بھی ہے جسکی آبادی پانچ فیصد ہے۔ یہ جمی، ٹونی، روزی، اور ٹیٹو پر مشتمل ہے۔ ان کی کرسیاں اور دولت کمانے کی مشینیں تو پاکستان میں ہیں مگر انکا بینک بیلنس، ویلاز، دل اور دماغ امریکہ اور یورپ میں ہیں۔ انکی اپنی ویلیؤز ہیں اور ہماری اپنی ویلیؤز ہیں۔  ہم میں سے جو انکی کلاس میں شامل ھونے کی کوشش کرتا ہے تو اسے ان کی ویلیؤز کے ساتھ کومپرومائز کرنا پڑتا ہے جو ہم نہیں کر پاتے۔ یہ وہ سفید فارم ہیں جو جنوبی افریقہ کے خزانوں پر قابض ہیں۔ مگر ان خزانوں کے وارث ہم سیاہ فارموں کو حقارت کی نظر سے دیکھتے ہیں۔ ہماری اور انکی کبھی دوستی نہیں ہو سکتی۔

پرانی بستیاں بھی اب سکون سے خالی ہوتی جا رہی ہیں بیٹے۔ انکی زندگیوں میں خوشیاں انکی سادہ زندگی کی وجہ سے تھی۔ مگر چند نودولتیوں نے اپنی دولت کی گھٹیا نمائش سے ان کی سادہ زندگیوں میں زہر گھول دیا ہے وہ جو رزق حلال کو بہترین رزق سمجھتے ہیں۔

وہ بستیاں آج بھی امن و سلامتی کا گہوارہ ہیں اس لئے کہ وہ صدیوں سے  ایک دوسرے کے ساتھ رہ رہے ہیں انکی آنکھوں میں ایک دوسرے کے لیے لحاظ ہے، وہ ایک دوسرے کی خوشیوں اور غموں میں شریک ہوے ہیں۔  انکا اپنا ایک کلچر ہے، وہ خلاء میں معلق نہیں رہتے۔ انکا اپنی زمین کے ساتھ ایک رشتہ ہے اور وہ اپنی زمین سے وابستہ ہیں۔ اب بیٹے فیصلہ تو آپ نے کرنا ہے کہ ہمیں کیا کرنا چاہیئے۔

Leave a comment

Filed under Feelings, Lahoriaat, Pakistan, Thoughts

extracts from Darwaza – Drama 81

roshan khyali ke bh kuch asool hoty hain. roshan khyali bhi kuch hadood ki paband hoti hya
bhooky ki koi pasand nahi hoti. pasand to unki hoti hay jinhain bohot si chezon main se kisi aik ka intkhab karna ho
sehat mand log phir kabhi ka lafz barhi asani se kehdety hain lekin woh jo aik aik sans gin darhy haon unky labon pe phir kabhi ka lafz kabhi nai ata
dil bhi darwazon ki tarha hoty hain jinky bahir kundi na lagi hui ho wo andar se bhi khuly hoty hain
apny aaj ko apni baqi manda zindagi ka pehla din samjho
la ilaj marz nahi hota mareeez hoty hain. jab koi mareez bemari ke agay hathyar dal de aor quwat e mudafiyat chorh de to usy la ilaj kehty hain

1 Comment

Filed under Diaries

yaden no jawani ki

mere honton pe aaty he haqeeqat main badal jay
mery dil se jo nikli hain duain shadmani ki
us ko mily dunia main shohrat gulfashani ki
ke jese dhaak bethi hay meri sherin byani ki
yehi mehfil yehi baten to humko yad aain gi
keh jab zehan main ubhrain ki yaden no jawani ki

Leave a comment

Filed under Urdu Poetry